’بینرز انڈیا کے خلاف تھے حق میں نہیں‘

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں نیشنل پریس کے سامنے ایف سکس سیکٹر میں سپر مارکیٹ جانے والی مرکزی شاہراہ پر اکھنڈ بھارت کے بینرز پر سوشل میڈیا کے صارفین کی زبردست بحث جاری ہے۔

ابتدائی طور پر بینرز کی ویڈیو اور تصاویر سامنے آنے کے بعد حب الوطن پاکستانیوں نے سخت ردعمل ظاہر کیا اور انتظامیہ و سیکورٹی اداروں کی نااہلی و ناکامی قرار دیا۔

اسلام آباد کے وفاقی ترقیاتی ادارے کے ملازمین نے پولیس کی مدد سے بینرز پانچ گھنٹے بعد اتار کر مقدمہ درج کر کے پرنٹر کو گرفتار کرنے کا بھی دعوی کیا ہے۔

اسلام آباد کے ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقات کا ایک ٹویٹ میں کہنا تھا کہ معاملے کی تفتیش جاری ہے۔

ادھر سوشل میڈیا پر بعض صارفین نے بینرز کا بغور جائزہ لینے کے بعد دعوی کیا ہے کہ بینرز دراصل انڈیا کے اکھنڈ بھارت ایجنڈے کے خلاف تھے مگر عبارت بنانے والے سے ابہام رہ گیا۔

صارفین نے لکھا ہے کہ انڈیا کو اسلام آباد میں بینرز لگانے کی کیا ضرورت ہے جب اس نے کشمیر پر اپنا قبضہ مستحکم کر لیا ہے اور دنیا میں کسی اہم ملک نے اس کی مذمت نہیں کی۔

اسلام آباد پولیس کے ایک اہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ اگر بینرز ملک مخالف ہوتے تو پرنٹنگ پریس والے کبھی اس پر اپنا نام نہ لکھتے۔ لگتا ہے کوئی عبارت میں کوئی غلطی ہوئی ہے یا پڑھنے والوں کو غلط فہمی ہوگئی ہے۔‘

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close