ناروے: مسجد میں فائرنگ، حملہ آور گرفتار

ناروے میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک ’سفید فام‘ 20 سالہ لڑکے نے مسجد میں گھس کر خودکار ہتھیار سے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ایک شخص زخمی ہو گیا ہے جبکہ پولیس نے حملہ آور کو گرفتار کر لیا ہے۔

ناروے اسلامک سینٹر کے زیرانتظام اوسلو کی النور مسجد میں ہونے والے حملے کے بارے میں وہاں کے ڈائریکٹر عرفان مشتاق نے مقامی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’حملہ آور نے بلٹ پروف جیکٹ اور ہیملٹ پہن رکھا تھا جبکہ اس کے ہاتھوں میں دو شاٹ گنز اور ایک پستول تھا۔‘

پولیس کے مطابق حملہ آور شیشے کا ایک دروازہ توڑ کر مسجد میں داخل ہوا اور فائرنگ کر دی۔ وہاں موجود افراد نے حملہ آور پر قابو پا کر اسے مقامی پولیس کے حوالے کیا۔

پولیس حکام کے مطابق حملہ آور کے گھر کی تلاشی لینے پر وہاں سے ایک خاتون کی لاش ملی جس کے بارے میں شبہ ہے کہ حملہ آور نے قتل کیا ہے۔

اسلامک کونسل ناروے نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’ہم سمجھتے ہیں کہ یہ واقعہ ناروے میں مسلم کمیونٹی کے خلاف عرصہ دراز سے پھیلائی جانے والی نفرت کا نتیجہ ہے جس کی کھلی اجازت دی گئی۔‘

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close