سعودی عرب میں مزید امریکی فوج

امریکہ نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات میں مزید فوج اور جنگی سامان بھیجنے کا اعلان کیا ہے۔ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے فوری طور پر ایران کی جانب سے کسی بھی خطرے سے نمٹنے کے لیے فوج اور ہتھیار روانہ کرنے کی منظوری دی ہے۔

 امریکہ کی جانب سے یہ اعلان سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پر ہونے والے حملے اور ایران کے خلاف نئی پابندیوں کے فیصلے کے بعد سامنے آیاہے ۔

 امریکی وزیر دفاع مارک ایسپر نے پینٹاگون میں نیوز بریفنگ کے دوران بتایا کہ سعودی عرب کی درخواست کے جواب میں صدر ٹرمپ نے مزید فوج تعینات کرنے کی منظوری دی ہے ۔ فوجیوں کی تعیناتی دفاعی نوعیت کی ہو گی۔ اس کا مقصد فضائی اور میزائل ڈیفنس ہے ۔

مارک ایسپر نے کہا کہ’ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کو فوجی ساز وسامان کی فراہمی تیز کرنے کے لئے بھی کام کریں گے تاکہ دونوں ملکوں کی دفاعی صلاحیت میں اضافہ ہو سکے۔‘ 

 ایران کی جانب سے مبینہ خطرات سے نمٹنے کے پیش نظر امریکہ نے دفاعی میزائل سسٹم پیٹریاٹ اور جنگی بحری بیڑے یو ایس ایس آرلنگٹن اور یو ایس ایس ابراہم لنکن پہلے ہی خلیج میں تعینات کر رکھے ہیں۔ 

 یاد رہے کہ گذشتہ جولائی میں پینٹاگون نے 500 امریکی فوجی سعودی عرب بھیجنے کا اعلان کیا تھا۔

 عالمی خبر رساں اداروں کے مطابق پینٹا گون کا کہنا ہے کہ فوجیوں کی تعیناتی غیر معمولی نوعیت کی نہیں ہوگی۔ ’یہ تعداد ہزاروں میں نہیں ہو گی جبکہ تعینات کیے جانے والے فوجیوں کی نوعیت دفاعی ہو گی۔‘

 پینٹاگون کا کہنا ہے کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کو فوجی ساز وسامان کی فراہمی بھی تیز کی جائے گی تاہم امریکہ نے اس حوالے سے مزید معلومات فراہم کرنے سے گریز کیا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close