لیکچرر جنید حفیظ کو سزائے موت کے خلاف سوشل میڈیا پر اضطراب

پاکستان میں توہین مذہب کے الزام میں گرفتار لیکچرر جنید حفیظ کو سزائے موت سنائے جانے کے فیصلے کے بعد سوشل میڈیا صارفین نے ردعمل میں اس خبر کو ٹاپ ٹرینڈ بنا دیا ہے۔

بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی کےسابق وزٹنگ لیکچرار پر 13 مارچ 2013 میں مقدمہ دائر کیا گیا تھا جس میں الزام عائد کیا گیا تھا کہ انہوں نے سوشل میڈیا پر مذہبی دل آزاری پر مبنی ریمارکس دیے تھے۔

سنیچر کو ملتان کی سیشن کورٹ نے سابق لیکچرار جنید حفیظ کو توہین مذہب کے الزام میں سزائے موت سنائی۔ جج کاشف قیوم نے لیکچرر جنید حفیظ کو توہین مذہب کے الزام میں سزائے موت، ایک لاکھ روپے جرمانہ اور دس سال قید کی سزا سنائی ہے۔

عدالت نے ملزم کو سزائے موت کے علاوہ ایک لاکھ روپے جرمانہ اور دس سال قید با مقشت کی سزا دی ہے۔

جنید حفیظ کے وکیل کو چند برس قبل فائرنگ کرکے قتل کر دیا گیا تھا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close