سینیٹ میں ’سنجرانی‘ پھر کامیاب

پاکستان کی پارلیمان کے ایوان بالا سینیٹ میں چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک میں ووٹنگ کے عمل میں 100 سینیٹرز نے حصہ لیا جس میں سے ان کے خلاف 50 ووٹ پڑے جبکہ ان کو ہٹانے کے لیے 53 ووٹوں کی ضرورت تھی۔

پانچ ووٹ مسترد ہوئے جبکہ سنجرانی کو 45 ووٹ ملے۔

اس سے قبل سنجرانی کے خلاف قرارداد پیش کی گئی جس کے حق میں 64 سینیٹرز اپنی نشستوں پر کھڑے ہوگئے۔ اپوزیشن ارکان میں سے 14 نے سنجرانی کے حق میں ووٹ دیے ہیں۔

اپنی ہار دیکھتے ہوئے حکومت کے قائد ایوان شبلی فراز نے کہا کہ ہم تقریریں نہیں کرنا چاہتے گنتی کرائی جائے جس کے جواب میں ن لیگ کے سینیٹر راجہ ظفرالحق نے عدم اعتماد کی تحریک پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہم بھی تقریریں نہیں کرنا چاہتے ووٹنگ کے عمل کا آغاز کیا جائے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close