بکاؤ سینیٹرز کو نہیں پکڑا جا سکتا

پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اعتزاز احسن نے کہا ہے کہ سینیٹ چیئرمین کے الیکشن میں ووٹ دیتے وقت پارٹی پالیسی کی خلاف ورزی کرنے والوں کی نشاندہی نہیں ہو سکتی جبکہ میر حاصل بزنجو نے کہا ہے کہ ان کی پارٹی میں ایسا کوئی ہوا تو اس کو باہر نکال دیں گے۔

سنیچر کو اسلام آباد میں اعتزاز احسن نے میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی جماعتوں کے پاس ایسا کوئی فارمولہ کہ مشکوک سینیٹر کی نشاندہی کر سکیں۔

”مشکوک سینیٹرز کی کوئی ٹرائزیکشن یا ویڈیو کال ہو تو پھر کوئی بات بن سکتی ہے۔“

ان کا کہنا تھا کہ چودہ مشکوک سینٹرز نے پچاس سینیٹرز کو مشکوک بنا دیا جو پارٹی کے ساتھ وفادار ہیں۔

سینیٹرز کو خریدنے کے معاملے پر میر حاصل بزنجو نے غیر رسمی گفتگو میں کہا کہ وزیراعظم نے پختونخوا میں اکیس صوبائی اراکین کو نکالا تھا اور پھر پبجاب میں 72 کو خرید لیا تھا۔

”وزیراعظم عمران نے کی پی کے سے نکالے پنجاب میں خرید لیے کاروبار تو ایک ہی تھا۔“

بزنجو نے کہا کہ اپوزیشن کی سیاسی جماعتیں مشکوک سینیٹرز کی نشاندہی کا کام کررہی ہیں اپنے قواعد کے مطابق کارروائی کریں گی۔ ”ہماری جماعت سے کوئی ملوث ہوا تو پارٹی سے نکال باہر کریں۔“

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close