امریکہ، دہشت گرد حملے میں 20 ہلاک

امریکی ریاست ٹیکساس میں ایک سفید فام مذہبی دہشت گرد نے شاپنگ مال میں فائرنگ کر کے 20 افراد کو ہلاک اور متعدد کو زخمی کر دیا ہے۔

ٹوئٹر پر سامنے آنے والی ویڈیوز اور تصاویر میں ٹیکساس سے تعلق رکھنے والے افراد نے کہا ہے کہ حملہ آور نے الپاسو میں وال مارٹ میں گھس کر بندوق سے فائرنگ کی اور چن چن کر لوگوں کو قتل کیا۔

حملہ آور کو بعد ازاں پولیس نے گرفتار کر لیا جس نے خود کو ٹرمپ کا حامی سفید فام قوم پرست قرار دیا جو امریکہ سے دیگر قومیت کے لوگوں کا خاتمہ چاہتا ہے۔

پولیس نے 21 سالہ حملہ آور کو حراست میں لیا ہے جس کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ فائرنگ کرنے والا وہ اکیلا شخص تھا۔

ٹیکساس کے گورنر گریگ ایبٹ نے ان پولیس افسروں کی تعریف کی جنھوں نے اسے گرفتار کیا۔

امریکی میڈیا میں اس شخص کی شناخت 21 سالہ پیٹرک کروسئس کے نام سے ہوئی ہے جسے ڈلاس کے علاقے کا رہائشی بتایا جا رہا ہے۔

سی سی ٹی وی فوٹیج اور امریکی میڈیا میں نشر کیے جانے والے مناظر میں ایک شخص کو گہری رنگ کی ٹی شرٹ پہنے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

ٹوٸٹر پر صارفین نے اس حملے کے بعد سفید فام قوم پرستی کا علم بلند کرنے پر صدر ٹرمپ کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

کئی صارفین نے لکھا ہے کہ امریکہ میں اس طرح کے دہشت گرد حملوں میں ملوث افراد مسلمان ہیں اور نہ ہی باہر سے آئے غیر قانونی تارکین وطن بلکہ ان کو یہیں پر شدت پسند بنایا گیا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close